دوستی

دوستی کی ایک مثال ملاحظہ کریں-

جنگ عظیم کے دوران ایک سپاہی نے اپنے دوست کو میدان جنگ میں گرتے ہوئے دیکھا- اس وقت خود اسکے مورچہ بھی گولیوں کی زد میں تھا- اس سپاہی نے اپنے لیفٹیننٹ سے پوچھا کہ کیا وہ اس "نو مینز لینڈ ” میں جا کر اپنے دوست کو واپس لا سکتا ہے؟

"تم جا سکے ہو” لیفٹیننٹ نے جواب دیا "لیکن میرا نہیں خیال کہ اس سے کچھ فائدہ ہو گا- تمہارہ دوست شائد مر چکا ہو گا اور تم بھی زندگی کو بھی خطرے میں ڈالو گے-”

معجزاتی طور پر وہ سپاہی اپنے دوست تک پہنچ گیا اور اسے اپنے کندھے پر ڈال کر واپس اپنے مورچہ میں پہنچ گیا-

لیفٹیننٹ نے اپنے زخمی سپاہی کو دیکھا اور پھر اسکے دوست کی طرف دیکھتے ہوئے کہا ” میں نے تمہیں کہا تھا کہ اسکا کوئ فائدہ نہیں ہو گا تمہارا دوست مر چکا ہے اور تم خود بری ظرح زخمی ہو گئے ہو-”
” اسکا فائدہ تھا سر-” سپاہی نے جواب دیا
"کیا مطلب کہ اسکا فائدہ تھا؟ تمہارا دوست مر چکا ہے-"لیفٹیننٹ نے پوچھا-
"یس سر-” سپاہی نے جواب دیا ” لیکن اسکا فائدہ تھا کیونکہ جب میں اسکے پاس پہنچا اس وقت وہ زندہ تھا اور اس نے مجھ سے یہ کہا کہ —” جم — مجھے پتہ تھا کہ تم ضرور آؤ گے-”

ایک حقیقی دوست وہ ہے جو اس وقت آپ کے پاس آتا ہے
جب باقی تمام دنیا آپکا ساتھ چھوڑ چکی ہوتی ہے-
Advertisements

2 comments on “دوستی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s