سراب۔۔۔ آخری حصہ

حصہ اول

"”تم لوگوں کا شادی کے بارے میں کیا خیال ہے۔ کوئی ارادہ ہے یا ایسے ہی زندگی انجوائے کرنی ہے بنا کسی ٹینشن کے۔” پیپسی کا گھونٹ لیتے ہوئے اس نے کہا۔

"” کم از کم اگلے کچھ سالوں تک تو بالکل نہیں۔ شادی کے بغیر ہی سب کچھ آرام سے چل رہا ہے” جینیفر نے اس کی بات کا جواب دیتے ہوئے کہا، "ہو سکتا ہے کچھ سالوں بعد میں شادی کر ہی لوں۔ ۔۔لیکن وہ رجسٹرڈ میرج ہوگی۔ میں سفید لباس پہن کے چرچ میں کے شادی نہیں کروں گی۔”

"کیوں۔” اس نے پوچھا حالانکہ جواب اس کی توقع کے عین مطابق تھا۔ یہ ان کے معاشرے میں عام بات تھی۔ پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements

سراب ۔۔۔ حصہ اول

"گرلڈ سالمن ود پوٹیٹوز۔”
اس نے مینیو کارڈ کاسرخ فلیپ بند کر کے ویٹرس کے ہاتھ میں دیتے ہوئے کہا۔ ۔ کارڈ پہ لکھے ہوئے کھانوں میں یہ واحد ڈش تھی جو اس کے لئے شجر ممنوعہ نہیں تھی۔ دیگر تمام کھانوں میں غیر ذبیحہ گوشت یا پورک کی آمیزش تھی یا پھر ذائقہ بڑھانے کے لئے وائن ساس استعمال کی گئی تھی۔ ڈائننگ ہال کی مدہم روشنیاں آنکھوں کو بھلی لگ رہی تھیں۔ اس کی نظریں غیر ارادی طور پر ویٹرس کا پیچھا کرنے لگیں جو اب دوسری میز پر مہمانوں کی فرمائش نوٹ کرتے ہوئے ہلکی پھلکی دل لگی بھی کر رہی تھی۔ ۔ شاید انہیں خوش کرنا بھی اس کے فرائض میں شامل تھا۔ ۔ پڑھنا جاری رکھیں

بچوں کے ساتھ وقت گزارنے کی اہمیت— ایک امریکی ماں کی نظر سے

ترجمہ و تلخیص: سمارا

اس مضمون کی مصنفہ Tennille Webster ہیں۔ مختلف انٹر نیٹ سائٹس پر آپ کے مضامین چھپتے رہتے ہیں۔


مصنفہ اپنی بیٹی کے ساتھ

میں اپنے وقت کا زیادہ تر حصہ اسی اسکرین کے سامنے گزارتی ہوں جس کے آگے میں ابھی بھی موجود ہوں۔۔۔ یہ ایک چھوٹی سی دس انچ کی ایل سی ڈی اسکرین ہے۔ اس اسکرین اور میرے بچوں میں کچھ بھی مشترک نہیں ہے۔ یہ میرے بچوں کی مماثلت صرف اسی وقت اختیار کرتی ہے جب میں ان کی تصویریں دیکھ رہی ہوں۔ کام کے اوقات میں بچوں کی تصویریں دیکھتے ہوئے مجھے احساس جرم ہوتا ہے کہ میں کام کی بجائے کچھ اورکر رہی ہوں۔ گویا جس وقت کی مجھے تنخواہ ملتی ہے اس وقت میں کام کی بجائے اپنے بچوں کی تصویریں دیکھنے میں مشغول ہوں۔ میری نظر میں یہ اپنے کام اور ذمہ داری کے ساتھ بے ایمانی ہے۔ مجھے کام دینے والوں نے یہ سوچ کر مجھے نوکری دی ہے کہ میں بہتر طریقے سے اپنی ذمہ داری انجام دوں گی لیکن حقیقت میں، میں کام کی بجائے کمپیوٹر اسکرین پر اپنے بچوں کی تصویریں دیکھنا پسند کرتی ہوں۔

لیکن میں کام کرتی کیوں ہوں؟ پڑھنا جاری رکھیں

بانو قدسیہ کی سوچ

بانو قدسیہ ایک بہت مشہور ادیب ہیں اور ان کی تحریروں نے بہت مقبولیت حاصل کی ہے- آپ نے اپنی تحریروں میں روز مرہ کی زندگی کی باتیں بہت اچھی طرح سے بیان کی ہیں-

آپ کی سوچ بہت دلچسپ ہے آج کل کے تناظر کو بانو قدسیہ کس طرح سے دیکھتی ہیں یا انکا میسیج کیا ہے یہاں میں آپ سب کے ساتھ شئر کرتی ہوں – پڑھنا جاری رکھیں

دوسروں سے موازنہ

اکثر خواتین اپنا موازنہ دوسری خواتین کے ساتھ کرتی رہتی ہیں اور انہیں بہت ساری ایسی باتیں اور چیزیں نظر آتی ہیں جن میں دوسری خاتون ان سے بہتر ہوتی ہیں- مثلا” وہ صرف 25 سال کی ہے اور اس نے یہ بھی کر لیا ہے اور یہ بھی کر لیا ہے- ہم ہزاروں باتوں میں دوسری خواتین سے موازنہ کرتے ہیں اور پتہ چلتا ہے کہ ہمارے پاس یہ چیز بھی نہیں ہے اور وہ چیز بھی نہیں ہے- پڑھنا جاری رکھیں